ویسٹ انڈین فاسٹ باؤلر ای این بشپ اور عاقب جاوید کا حیران کن مشورہ

کراچی (ویب ڈیسک) سابق ویسٹ انڈین فاسٹ بولر اور کرکٹ مبصر ای این بشپ نے پاکستانی کرکٹ انتظامیہ کو مشورہ دیا ہے کہ شاہین شاہ آفریدی بہت بڑ ا اسٹار ہے اسے دس سے بارہ سال محتاط انداز میں استعمال کیا جائے۔ واضح رہے کہ پاکستان میں بھی ماہرین اور سابق کرکٹرز کے مشورہ کے بعد انہیں

آفریدی کو ٹیم انتظامیہ تینوں فارمیٹ میں مسلسل کھلارہی ہے اب شاہین شاہ نے آرام کی درخواست کی ہے۔ جمعرات کو پی سی بی پوڈ کاسٹ میں بشپ نے کہا کہ 21 سالہ شاہین شاہ آفریدی میں بے پناہ ٹیلنٹ ہےجمیکا ٹیسٹ میں ہر دن شاہین کاتھا ۔ وہ پاکستان ٹیم کا موثر ہتھیار ہیں ، پاکستان کے پاس ورلڈ کلاس بولر اور بیٹسمین ہیں۔ بابر اعظم اور فواد عالم بہترین بیٹسمین ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ سیریز میں دونوں ٹیموں میں ورلڈ کلاس بولر تھے اسی طرح بیٹنگ میں بھی کئی بڑے نام ہیں لیکن شاہین شاہ نے متاثر کیا۔ سابق کپتان ڈیرن گنگا نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم اچھی ہے اور ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں یہ ٹیم اچھی کارکردگی دکھائے گی۔ فواد عالم نے ثابت کیا کہ ٹیسٹ میں کس طرح بیٹنگ کی جاتی ہے دوسری جانب پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کھلاڑی اور پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) فرنچائز لاہور قلندرز کے ہیڈ کوچ عاقب جاوید نے کہا ہے کہ فاسٹ باؤلر شاہین شاہ آفریدی میں بڑا سپر سٹار بننے کیلئے سب کچھ ہے اور وہ بہترین باؤلر بننے کے سفر پر کامیابی سے گامزن ہیں۔ عاقب جاوید کا کہنا تھا کہ دنیا میں اس وقت جتنے بھی فاسٹ باؤلرز تیزی سے اپنی پہچان بنا رہے ہیں

ان میں شاہین شاہ آفریدی سب سے بہترین ہیں، وہ بہت کچھ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ، ان کا ایکشن زبردست ہے اور کم عمری میں ہی وہ تینوں فارمیٹس میں قومی ٹیم کی نمائندگی کر رہے ہیں، اس وجہ سے انہیں آرام کا موقع بھی نہیں مل رہا اگر اس کے باوجود ان کی کارکردگی روز بہ روز بہتر ہو رہی ہے۔ انہوں نے شاہین شاہ آفریدی کی مزید خوبیوں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ انہیں لمبے قد کا بہت فائدہ ہو رہا ہے اور وہ نئے گیند کیساتھ سوئنگ کرنا سیکھنے کے علاوہ لمبے سپیل بھی آسانی سے کرنے لگے ہیں، یہی وجہ ہے کہ میں یقین سے کہہ سکتا ہوں کہ ان میں سپرسٹار بننے کیلئے وہ تمام خوبیاں موجود ہیں

جو ایک فاسٹ باؤلر میں ہونی چاہئیں۔ ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹیسٹ سیریز برابر ہونے سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے عاقب جاوید کا کہنا تھا کہ کیریبین میں وکٹیں آسان نہیں تھیں اور دوسرے ٹیسٹ میچ میں بھی فواد عالم کی غیر معمولی بیٹنگ کے باعث پاکستانی ٹیم میچ میں واپس آئی، دوسری صورت میں میچ ہاتھ سے نکل سکتا تھا۔ سابق کرکٹر نے کہا کہ قومی ٹیم میں بیٹنگ کا مسئلہ نیا نہیں بلکہ بہت پرانا ہے جس کا واحد حل یہ ہے کہ ’اے ٹیم‘ کو مستقل کیا جائے جو مشکل کنڈیشنز میں آسٹریلیا، انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقہ میں کھیلے اور وہاں کی صورتحال سے ہم آہنگ ہوں، ان کے باقاعدہ غیر ملکی دورے ہوں اور اگر ایسا نہیں ہو گا تو پھر یہ مسئلہ چلتا رہے گا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *